HomePAKISTANوہیل مچھلی کی خوراک بننے کےباوجود زندہ بچ جانے والا انسان

وہیل مچھلی کی خوراک بننے کےباوجود زندہ بچ جانے والا انسان


نیویارک(ویب ڈیسک)کیا آپ تصور بھی کر سکتے ہیں کہ آپ چند سیکنڈز کے لیے دنیا کے سب سے بڑی سمندری مخلوق یعنی وہیل مچھلی کا نوالہ بن جائیں اور اس کےبعد بچ بھی جائیں ۔ یقینا آپ ایسا ہرگز نہیں چاہیں گے بلکہ ایسا کوئی تصور بھی نہیں کرنا چاہتا ہو گا۔ لیکن اس تجربے سے امریکا

کا ایک شہری گزر چکا ہے ۔56سالہ مائیکل پیکارڈ کا کہنا ہے کہ وہ گزشتہ برس میساچوسٹس میں سمندر کی تہہ سے لابسٹرز نکالنے کے لیے غوطہ لگا رہے تھے کہ اسی دوران27 ہزار کلو گرام وزنی ایک مپ بیک وہیل کے منہ میں چلے گئے ۔ مائیک نے بتایا کہ جب انہوں نے غوطہ لگایا تو انہیں کچھ دیر بعد ایک جھٹکامحسوس ہوا جس کے بعد ان کے چاروں اطرف اندھیرا چھا گیا۔چند لمحوں بعد جسم پر شدید دباؤ محسوس ہوا جس کے بعد انہیں حالات کا اندازہوا کہ یہ معاملہ کچھ اور ہے۔ان کا کہنا تھا کہ 12 سیکنڈ کے بعد وہیل نے اپنا سر سمندر کی سطح سے باہر نکالا اور انہیں باہر پھینک دیا۔جس کے بعد انہیں یہ جان کر زیادہ خوف محسوس ہوا کہ وہ ایک وہیل کے پیٹ میں تھے۔ مائک کا کہنا تھا کہ کشتی پر سوار ان کے ساتھی بھی وہیل کو اچانک اپنے قریب پا کر حیران تھے جنہوں نے مائیک کو مچھلی کے منہ سے باہر آتے دیکھ لیا تھا۔ مائیک کا کہنا تھا کہ ان کے ایک ساتھی نے سب سے پہلے ان کو پانی سے باہر نکلنے میں مدد کی جس کے بعدانہیں ایمرجنسی میں داخل کرایا گیا۔مائیک نے بتایا کہ وہ اس واقعے کے بعد 3 ہفتوں تک اسپتال میں رہے جبکہ حادثے میں ان کی ٹانگ زخمی ہوئی تھی



Source link

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

close